20

کالج کے زمانے میں چھوٹی موٹی غلطیاں ہو جاتی ہیں، یہ میرا۔۔۔۔۔ اداکارہ شبنم ریپ کیس میں سزا یافتہ فاروق بندیال بھی میدان میں آگئے، اپنی صفائی میں کیا کچھ کہہ ڈالا ؟ جانیے

لاہور (انر پاکستان آن لائن) ماضی کی معروف اداکارہ شبنم کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے جرم میں سزایافتہ فاروق بندیال کی پی ٹی آئی میں شمولیت پر سوشل میڈیا پر طوفان برپا ہو گیا جس کے بعد عمران خان میدان میں آئے اور انکوائری کا حکم دے دیا تاہم اب خبریں آ رہی ہیں کہ

انہیں پارٹی سے نکال دیا گیاہے جس پر اب فاروق بندیا ل سامنے آگئے ہیں اور اپنے جرم پر انتہائی شرمناک موقف دے دیاہے ۔نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق فاروق بندیال کا کہناہے کہ ”کالج کے زمانے میں چھوٹی موٹی غلطیاں ہو جاتی ہیں ،یہ میرا ماضی تھا اور حال نہیں ہے، ریپ کے الزام میں صداقت نہیں ،ڈکیتی کے کیس میں ملوث تھا ،اداکارہ شبنم زندہ ہیں آپ ان سے پوچھ لیجیے “۔فاروق بندیال کا کہناتھا کہ میرے نظریات پی ٹی آئی سے ملتے ہیں اور اگر وہ مجھے ٹکٹ نہیں دیں گے تو میں آزاد الیکشن لڑوں گا ۔واضح رہے کہ یہ دل دہلا دینے والا واقع ضیا دور میں 1980 میں پیش آیا اور اس وقت کی خصوصی عدالت نے انہیں سزائے موت سنائی تھی تاہم بعدازاں ان کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کر دیا گیا لیکن بعد میں اداکارہ شبنم نے انہیں معاف کر دیا ۔ واضح رہے کہ اس سےقبل سینئر صحافی کامران شاہد نے انکشاف کیاہے کہ تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے فاروق بندیال کو پارٹی سے نکال دیا ہے، انہوں نے یہ ایکشن پر سوشل میڈیا پر صارفین کی شکایات کی بھر مار پر لیا۔تفصیلات کے مطابق خوشاب سے سیاسی رہنما فاروق بندیا ل کی تحریک انصاف میں شمولیت پر

سوشل میڈیا پرصارفین کی جانب سے بھونچال برپا کردیا گیا تھا ، صارفین کا کہنا تھا کہ یہ شخص ریپ اور ڈکیتی کاسزا یافتہ ملزم ہے جس نے سابق صدر ضیا ءالحق کے دور میں اداکارہ شبنم کو ان کے بیٹے اور شوہر کے سامنے دوران ڈکیتی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا ، سوشل میڈیاپر تنقید کے بعد عمران خان نے ان الزامات کی تحقیقات کے لئے نعیم الحق کی سربراہی میں کمیٹی بنا دی تھی اور بعد ازاں فوری ایکشن لیتے ہوئے فار وق بندیا ل کو تحریک انصاف سے خارج کرنے کااعلان کردیا ۔ واضح رہے کہ اس سےقبل پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے فاروق بندیال کی پارٹی میں شمولیت پر ہونے والے ہنگامے پرایکشن لیتے ہوئےپارٹی کے سینئر رہنما نعیم الحق پر مبنی ایک رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو تین دنوں میں حقائق پارٹی چیئرمین کے سامنے رکھے گی۔تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان فواد چوہدری نے کہا ہے کہ سزا یافتہ مجرم کاپی ٹی آئی کا حصہ بننے کی اطلاعات پر نوٹس لے لیا گیا ہے، تین دن میں حقائق عمران خان کے سامنے رکھے جائیں گے، اخلاقی معیار پر کسی صورت سمجھوتہ نہیں کریں گے۔خیال رہے فاروق بندیال نے بنی گالہ میں عمران خان سے ملاقات کے بعد پارٹی میں شمولیت اختیار کی تھی جس کی تصاویر سوشل میڈیا پروائرل ہوئی تو صارفین نے اس پر سخت تنقید کی۔

سوشل میڈیا صارفین نے فاروق بندیال کا ماضی کھنگال ڈالا جس کے مطابق اس شخص پر معروف اداکارہ شبنم سے اجتماعی زیادتی کا الزام ہے۔ فاروق بندیال پر الزام تھا کہ ا نہوں نے اداکارہ کے شوہر اور بیٹے کے سامنے اداکارہ سے زیادتی کی۔جنرل ضیا دور میں خصوصی عدالت نے مجرم کو سزائے موت بھی سنائی تاہم شبنم سے معافی نامے کے بعد سزائے موت ختم کی گئی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں